افغانستان میں خون کی ہولی، آسٹریلوی سیکورٹی فورسز کے جنگی جرائم بے نقاب


Mian Fayyaz Ahmed Posted on November 19, 2020

ایڈنبرا: آسٹریلیا کی سیکورٹی فورسز کے جنگی جرائم بے نقاب ہو گئے ہیں، اس کے فوجی افغان جنگ کی آڑ میں نہتے شہریوں کے خون سے ہولی کھیلتے رہے۔آسٹریلین محکمہ دفاع کی تحقیقاتی رپورٹ ہونے والے لرزہ خیز انکشافات میں کہا گیا ہے کہ سپیشل فورسز میں جنگی جنون کا ماحول بے لگام ہو گیا، پلاٹون کمانڈرز نئے فوجیوں کو افغان قیدیوں کو گولی مارنے کے لئے اکساتے تاکہ انھیں انسانوں کو قتل کرنے کا تجربہ ہو جائے۔دہلا دینے والی اس رپورٹ کے مطابق اس عمل کا نام ‘’بلڈنگ’’ رکھا گیا، بعد میں مقتولین کے پاس اسلحہ پھینک دیا جاتا تاکہ جرائم پر پردہ ڈالا جا سکے۔ 39 افغانوں کے بلا وجہ قتل کے ناقابل تردید شواہد سامنے آ گئے، جس میں قیدی، کسان اور عام افغان شہری شامل ہیں۔

تحقیقاتی کمیٹی کے انچارج میجر جنرل جسٹس پال بریریٹن نے چار سو چشم دید گواہوں کے انٹرویو کے بعد 19 سپیشل فورسز کے اہلکاروں کے خلاف پولیس تحقیقات کی سفارش کر دی ہے۔ رپورٹ میں دو ہزار نو سے دو ہزار تیرہ تک پیش آنے والے 23 الگ الگ واقعات کی چانچ کرنے کی درخواست بھی کی گئی ہے